یہ کوئی بوڑھا بابا نہیں بلکہ ایک چار سال کا بچہ ہے

یہ کوئی بوڑھا بابا نہیں بلکہ ایک چار سال کا بچہ ہے یہ کوئی بوڑھا بابا نہیں بلکہ ایک چار سال کا بچہ ہے یہ کوئی بوڑھا بابا نہیں بلکہ ایک چار سال کا بچہ ہے آپ نے بالی ووڈ فلم پا دیکھی ہوگی جس میں سپر اسٹار امیتابھ بچن نے 12 سال کے ایک ایسے لڑکے کا کردار نبھایا ہے جو اپنے جسم کی وجہ سے 80 سال کا لگتا ہے. ایسا خاص طرح کے ڈس آرڈر کے مدنظر ہوتا ہے.

اب ایسا ہی ایک معاملہ بنگلہ دیش میں سامنے آیا ہے، جہاں 4 سال کے بچے کو دیکھ کر لوگ حیران ہیں. مزید سلائڈ میں جانیں کہ یہ کیسی بیماری ہے اور بنگلہ دیش کے بچے کی کیا ہے

کہانی. بنگلہ دیش کا 4 سالہ واجد حسین پروگیريا کا شکار ہے. یہ وہی بیماری ہے جو پا فلم میں امیتابھ بچن کو ہوئی تھی. اس میں بچے کا جسم غیر متوقع طریقے سے جتنی تیزی سے بڑھتا ہے، اتنی ہی تیزی سے بوڑھا بھی ہوتا ہے. پروگیريا میں مبتلا لوگوں کے چہرے میں سوجن آجاتی ہے، تو آنکھیں اندر گھس جاتی ہیں. جسم کی جلد تیزی سے بزرگوں کی طرح دھيلی ہو جاتی ہے جس سے جسم کے ہر جوڑے پر ناقابل برداشت درد ہونے لگتا ہے.

دانت ٹوٹ کر گرنے لگتے ہیں. خاص بات یہ ہے کہ پروگیريا کا کوئی صحیح علاج اب تک ڈھونڈا نہیں جا سکا ہے. واجد صرف 4 سال کا ہے، لیکن اسکول نہیں جا سکتا. ایسا اس وجہ سے، کیونکہ اسے دیکھ کر اسکول کے سارے بچے ڈر جاتے ہیں. واجد نے 3 سال کی عمر میں مشکل سے چلنا سیکھا، لیکن صرف 3 ماہ کی عمر میں ہی اس کے منہ میں سارے دانت آ گئے تھے. واجد کی کہانی ہندی فلم پا کی یاد دلاتی ہے جس میں امیتابھ ایسے ہی ایک بیماری کا شکار ہوتے ہیں. اس کے والد نے کہا کہ وہ بھلے ہی جسمانی طور پر کمزور ہے، لیکن دماغی طور پر وہ انتہائی تیز ہے.

واجد بچہ ہے، لیکن بڑوں سا لگتا ہے. ان کا کہنا ہے کہ میرا بچہ عام بچہ نہیں ہے. ہم جانتے ہیں کہ وہ زیادہ طویل زندگی نہیں جی پائے گا، لیکن صرف اس وجہ سے ہم اس سے منہ نہیں موڑ سکتے. بتا دیں کہ پروگیريا کے مریضوں کی اوسط زیادہ سے زیادہ عمر صرف 13 ہے. ایسے لوگوں کو مسلسل ہارٹ اٹیک اور برین اسٹروک کے مسائل آتے رہتے ہیں، جس کی وجہ سے ان کی زندگی زیادہ طویل نہیں ہوتی.

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے