ٹرمپ کی پہلی بیوی کے طنز پر امریکہ کی خاتونِ اوّل کا جواب

امریکہ کی خاتونِ اوّل میلانیا ٹرمپ کے ترجمان کی جانب سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ ان کے شوہر کی سابق اہلیہ ایوانا کی جانب سے دیے گئے تازہ بیان کو محض توجہ حاصل کرنے کی کوشش قرار دیا ہے۔

ایوانا ٹرمپ نے چینل اے بی سی کے پروگرام ’گُڈ مارننگ امیریکہ ` میں کہا کہ چونکہ وہ ٹرمپ کی پہلی بیوی ہیں اس لیے وہ ’خاتونِ اوّل‘ ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ان کے پاس وائٹ ہاؤس کی ایک براہِ راست فون لائن ہے لیکن وہ ’کسی قسم کے حسد کی وجہ نہیں بننا چاہتیں۔‘

ڈونلڈ ٹرمپ کی پہلی اہلیہ کی ایک کتاب ’ریسنگ ٹرمپ‘ منگل کو جاری کی جائے گی۔

وہ سنہ 1977 سے لے کر سنہ 1990 کی دہائی تک ڈونلڈ ٹرمپ کی زوجہ رہیں۔ انھوں نے ٹرمپ کے مارلا میپلز کے ساتھ افیئر کے بعد طلاق لے لی تھے۔ مارلا ٹرمپ کی دوسری بیوی تھیں۔

ایوانا اور ڈونلڈ ٹرمپ کے تین بچے ڈونلڈ جونیئر، ایوانکا اور ایرک ٹرمپ ہیں۔

ایوانا ٹرمپ کا کہنا تھا کہ وہ اپنے سابقہ شوہر سے پندرہ دن بعد بات کرتی ہیں۔

’ میرے پاس وائٹ ہاؤس کا ایک براہِ راست نمبر موجود ہے لیکن میں وہاں کال کرنا نہیں چاہتی کیونکہ میلانیا وہاں ہے۔‘

’میں کسی قسم کے حسد کی وجہ نہیں بننا چاہتی کیونکہ میں ٹرمپ کی پہلی بیوی ہوں اور میں خاتونِ اوّل ہوں۔‘

میلانیا ٹرمپ کے ردِ عمل میں مشتمل ان کے ترجمان کے بیان میں کہا گیا ’مسز ٹرمپ نے وائٹ ہاؤس کو ان کے بیٹے بیرن اور صدر کے لیے گھر بنایا ہے۔‘

بیان میں مزید کہا گیا کہ ’ ’انہیں واشنگٹن ڈی سی میں رہنا اچھا لگتا ہے اور وہ امریکہ کی خاتونِ اوّل کے کردار میں کافی فخر محسوس کررہی ہیں۔ وہ اپنے اس لقب کو بچوں کی مدد کے لیے استعمال کریں گی نہ کہ کتاب بیچنے کے لیے۔‘

’ایک سابقہ بیوی کی جانب سے ایسے بیان کا کوئی مطلب نہیں ہے سوائے اس کے کہ یہ توجہ حاصل کرنے کے لیے اور اپنے غرض کے لیے شور مچانا ہے۔‘

ڈونلڈ ٹرمپ سے پہلے رونلڈ ریگن واحد طلاق یافتہ امریکی صدر تھے۔

You May Also Like

One thought on “ٹرمپ کی پہلی بیوی کے طنز پر امریکہ کی خاتونِ اوّل کا جواب

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے