وزیر اعظم کی تقریر پی ٹی وی پر نشر نہ ہونے کی وجہ کیا؟

اسلام آباد (ویب ڈیسک) سابق وزیراعظم نواز شریف کے ممبئی حملوں سے متعلق بیان کے بعد قومی وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کے زیر صدارت قومی سلامتی کا اجلاس ہوا جس کے اعلامیہ میں نواز شریف کے بیان کو متفقہ طور پر مسترد کر دیا گیا۔اجلاس ختم ہونے کے بعد وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی جانب سے،
پریس کانفرنس کی خبر سامنے آئی لیکن پاکستانی اس وقت حیرت میں مبتلا ہو گئے جب ان کی پریس کانفرنس کسی بھی ٹی وی چینل حتیٰ کہ سرکاری ٹی وی چینل پر بھی نشر نہ کی گئی جس کے بعد کئی سوالات جنم لینے لگے لیکن اب تہلکہ خیز تفصیلات سامنے آ گئی ہیں۔ نجی ٹی وی کے مطابق وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب کی نگرانی میں وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی پریس کانفرنس ریکارڈ کی گئی جس کے بعد پی ٹی وی کے عملے کو وزیراعظم آفس میں روک لیا گیا۔ عملے سے ان کی پریس کانفرنس کی ڈی وی ڈیز تیار کروائیں جس کے بعد کیمرے سے ریکارڈنگ بھی ڈیلیٹ کر دیا گیا۔ رپورٹ کے مطابق وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب نے ڈی وی ڈیز قبضے میں لینے کے بعد پی ٹی وی کے عملے کو جانے کی اجازت دی۔جبکہ دوسری جانب وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی پریس کانفرنس نشر نہ کرنے کے حوالے سے وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ وہ پریس کانفرنس نہیں تھی پریس ٹاک تھی جو نشر نہیں کرنی تھی۔

واضح رہے کہ قومی سلامتی کمیٹی کے اجلاس کے بعد وزیراعظم ہاﺅس سے اعلان کیا گیا تھا کہ شاہد خاقان عباسی اہم پریس کانفرنس کریں گے جس میں وہ سابق وزیراعظم نوازشریف کے متنازع بیان کے حوالے سے وضاحت کرینگے ،وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے پریس کانفرنس تو کی وہ سرکاری ٹی وی سمیت کسی چینل پر نشر نہیں کی گئی۔آج صبح سابق وزیراعظم نوازشریف کی احتساب عدالت میں پیشی کے موقع پر صحافی کے سوال”وزیر اعظم کی پریس کانفرنس سرکاری ٹی وی پر نشر کیوں نہیں کی گئی؟“کے جواب میں وزیر اطلاعات و نشریات مریم اورنگزیب نے کہا کہ وہ پریس کانفرنس نہیں تھی پریس ٹاک تھی نشر نہیں کرنی تھی۔(س)

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے