(ن) لیگ سے پیپلز پارٹی کے رابطوں کی بحالی

اسلام آباد (ویب ڈیسک) آصف زرداری نے (ن) لیگ سے پیپلز پارٹی کے رابطوں کی بحالی کا اختیار سابق وزیر پٹرولیم ڈاکٹر عاصم کو دے دیا پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرینز کے سربراہ سے ہمیشہ قریبی رابطہ میں رہنے والے ایک سینئر وزیر نے اب تک 5 مرتبہ پیپلز پارٹی کے متعدد رہنمائوں کے ذریعے آصف زرداری سے رابطہ کرنے کی کوشش کی اور نوازشریف سے ملاقات کا پ

یغام دیا۔تفصیلات کے مطابق سابق صدر آصف علی زرداری نے ایک سینئر وزیر کی طرف سے سابق وزیر اعظم نوازشریف سے ملاقات کرنے کی کوششوں کا ایک مرتبہ پھر مثبت جواب دینے سے انکار کر دیا ہے اور (ن) لیگ سے پیپلز پارٹی کے رابطوں کی بحالی کا اختیار سابق وزیر پٹرولیم ڈاکٹر عاصم حسین کو دے دیا ہے ۔ذرائع کے مطابق ایک اہم سینئر وفاقی وزیر جن کا ماضی میں سابق صدر آصف علی زرداری سے ہمیشہ قریبی رابطہ رہا ہے نے اب تک 5 مرتبہ پیپلز پارٹی کے متعدد رہنمائوں کے ذریعے آصف زرداری سے رابطہ کرنے کی کوشش کی اور کئی مرتبہ اس وفاقی وزیر نے آصف زرداری کے ذاتی موبائل فون پر بھی رابطہ کیا جس کا آصف زرداری نے جواب دینے سے گریز کیا ۔ آصف زرداری سابق وزیر اعظم نواز شریف سے دوبارہ ملاقات کرنے پر رضا مند نہیں ہو رہے اور جب پیپلز پارٹی کے دو رہنمائوں نے اس سینئر وزیر کی طرف سے آصف زرداری کو نواز شریف سے ملاقات کرنے کا پیغام دیا تو انہوں نے سابق وزیر پٹرولیم ڈاکٹر عاصم حسین کو اپنے پاس بلا لیا اور پیغام لانے والے پیپلز پارٹی کے رہنماء سے کہا کہ اگر ڈاکٹر عاصم اجازت دے دیں تو (ن) لیگ سے بات ہو سکتی ہے ۔ آصف زرداری نے موقف اختیار کیا ہے کہ ڈاکٹر عاصم کے ساتھ (ن) لیگ کی حکومت نے بہت زیادتیاں کی ہیں اور میں اس قریبی دوست کی اجازت کے بغیر نواز شریف یا (ن) لیگ سے کسی قسم کا رابطہ نہیں کرنا چاہتا ۔ پیپلز پارٹی 2015 میں ڈاکٹر عاصم کی گرفتاری اور پیپلز پارٹی کے ساتھ ہونے والے سلوک کے بعد (ن) لیگ پر دوبارہ اعتماد کرنے کے لئے رضا مند نہیں ہو رہی اسی لئے آصف زرداری سینئر وفاقی وزیر کے رابطوں پر کسی قسم کا جواب دینے کے لئے تیار نہیں ہیں ۔ واضح رہے کہ یہ سینئر وفاقی وزیر ہمیشہ آصف زرداری سے رابطوں میں رہے ہیں اور ان کی پیپلز پارٹی کے ایک اہم رہنما سے قریبی رشتہ داری بھی ہے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے