نمبر گیم میں سب سے آگے ہونے کے باوجود ن لیگ کیلئے اپنا چیئرمین سینیٹ منتخب کروانا مشکل کیوں ہے؟

نمبر گیم میں سب سے آگے ہونے کے باوجود ن لیگ کیلئے اپنا چیئرمین سینیٹ منتخب کروانا مشکل کیوں ہے؟ملاحظہ کیجئے ، تازہ ترین سیاسی تبصرہ نمبر گیم میں سب سے آگے ہونے کے باوجود ن لیگ کیلئے اپنا چیئرمین سینیٹ منتخب کروانا مشکل کیوں ہے؟ملاحظہ کیجئے ، تازہ ترین سیاسی تبصرہ

اسلام آباد( مانیٹرنگ ڈیسک) شہر اقتدار اس وقت زبردست سیاسی سر گرمیوں کا مرکز بنا ہوا ہے،سینیٹ انتخابات کا ہنگامہ ختم ہو ا تو چیئرمین سینیٹ کے انتخاب کیلئے جوڑ توڑ شروع ہو گیا، تازہ ترین اطلاعات کے مطابق پیپلزپار ٹی کے شریک چیئرمین آصف ذرداری اور مسلم لیگ ن کے قائد نواز شریف نے اسلام آباد میں ہی ڈیر ے ڈال لئے ہیں جہاں سیاسی قائدین اور اتحادی جماعتوں سے مشاورت کا سلسلہ شروع ہو نے جارہا ہے ، خدشہ ہے کہ چیئرمین سینیٹ کیلئے ممکنہ طور پر پڑنے والے گھمسان کے رن میں بہت سوں کے چیتھڑے اڑ سکتے ہیں ، وہیں بہت کچھ زیادہ واضح ہو کر بھی سامنے آنے کا امکان ہے ،

مثلاً آئندہ انتخابات اور بننے والی نئی حکومت کے ممکنہ خدوخال ۔ فی الوقت نمبر گیم میں مسلم لیگ ن کی پوزیشن کافی مستحکم ہے البتہ اداروں سے ٹکراؤ کی پالیسی نے ن لیگ کی چیئرمین سینٹ کے انتخاب میں کامیابی کے امکان کو دھندلا دیا ہے، دوسری جانب 20سیٹیوں کے ساتھ بھی ن لیگ کی حریف پیپلز پار ٹی بلا کے اعتماد کا مظاہرہ کرہی ہے، جوڑ توڑ کے ماہر سابق صدر کے دست راست غیر سیاسی مگر متحرک شخصیت عبدالقیوم سومرو نے بلوچستان اور فاٹا سے نو منتخب ارکان سینیٹ کی حمایت حاصل کرنے کا دعویٰ کیا ہے جس کی روشنی میں ن لیگ اور پیپلزپارٹی کے درمیان کانٹے کے مقابلے کا امکان ہے ، آئندہ 48 گھنٹوں میں اسلام آباد میں ہونے والی سیاسی ہلچل بہت کچھ واضح کر دے گی ، مسلم لیگ ن کے رہنما خواجہ سعد رفیق کا کہنا ہے کہ پنجاب ہاؤس میں چیئرمین سینیٹ کے نام پر مشاورت جارہی ہے جس کے بعد چیئرمین کیلئے لیگی امیدوار کے نام کا اعلان کیا جا ئے گا۔(م،س)

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے