لاہوراورمیانوالی کی جائیداد کی تفصیل ملنے کے بعد عمران خان اورطاہر القادری کی جائیداد قرق کرلی جائے گی

اسلام آباد(ویب ڈیسک) ایس ایس پی عصمت اللہ تشدد کیس میں عدالت نے واضح کیا ہے کہ لاہوراورمیانوالی کی جائیداد کی تفصیل ملنے کے بعد عمران خان اورطاہر القادری کی جائیداد قرق کرلی جائے گی ۔ایس ایس پی عصمت اللہ تشدد کیس میں اشتہاری قرار پانے والے عمران خان اورطاہر القادری کی جائیداد کی مکمل تفصیلات آج بھی پیش نہ

کی جا سکیں ۔ انسداد دہشتگردی عدالت نے واضح کیا کہ لاہور اورمیانوالی کی جائیداد کی تفصیل ملنے کے بعد جائیداد قرق کرلی جائے گی ۔ انسداد دہشت گردی کی عدالت کے جج شاہ رخ ارجمند نے ایس ایس پی عصمت اللہ جونیجو تشدد کیس کی سماعت کی ۔ مقدمے میں استغاثہ کے تمام گواہوں کے بیانات ریکارڈ کر لیے گئے ۔ چیف کمشنر اسلام آباد نے صرف اسلام آباد میں ملزمان کی جائیداد کی تفصیل پیش کرتے ہوئے بتایا کہ عمران خان اسلام آباد میں تین سو کنال اراضی کے مالک ہیں جبکہ طاہر القادری کی اسلام آباد میں کوئی جائیداد نہیں ہے ۔ عدالت نے ایک مرتبہ پھر عمران خان اور طاہر القادری کی جائیدادوں کا ریکارڈ جمع کرانے کا حکم دیتے ہوئے کہا لاہور اور میانوالی کی جائیداد کی تفصیل ملنے کے بعد جائیداد قرق کر لی جائے گی ۔ واضح رہے کہ یکم ستمبر2014 کو پی ٹی آئی اور عوامی تحریک کے دھرنے کے دوران مشتعل کارکنوں نے پولیس اور ایف سی پر دھاوا بول دیا تھا، مظاہرین پاک سیکریٹریٹ کا دروازہ توڑ کر اندر داخل ہوئے تھے جنہیں روکنے کے دوران ایس ایس پی آپریشنز اسلام آباد عصمت اللہ جونیجو زخمی ہوگئے تھے۔ مشتعل ہجوم نے ایس ایس پی آپریشنز پر پتھراؤ بھی کیا تھا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے