دنیا کے مہنگے ترین پھول

رنگا رنگ پھولوں کی خوبصورتی ہر آنکھ کو ہی متاثر کرتی ہے اور دنیا بھر میں پھول کو خوبصورتی کی علامت سمجھا جاتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ دنیا بھر میں پھول خوبصورتی کے لئے لگائے جاتے ہیں لیکن دنیا میں چند پھول ایسے بھی ہیں جو کہ انتہائی نایاب اور مہنگے ترین ہیں- ان کے مہنگے ہونے کی وجہ ان پھولوں کا نازک ہونا یا پھر ایک لمبے عرصے کے بعد ان کا وجود میں آنا ہےاور انہی وجوہات کے باعث یہ پھول ہمیں عام دکھائی نہیں دیتے۔ کاداپول فلور(Kadapul Flower) کاداپول فلور دنیا کا سب سے مہنگا اور

Flower)

کاداپول فلور دنیا کا سب سے مہنگا اور انمول ترین پھول ہے- اس پھول کی زندگی کا دورانیہ انتہائی مختصر ہے جبکہ یہ صرف سری لنکا میں پایا جاتا ہے- یہ پھول صرف چند گھنٹے ہی ٹھہر سکتا ہے اور اس کی خوشبو بھی صرف رات کے دوران ہی سونگھی جاسکتی ہےاور اسی وجہ سے اس کی کوئی قیمت طے نہیں کی گئی ہے۔اسی لیے اسے دنیا کا مہنگا ترین پھول کہا جاتا ہے۔

جولیٹ روس (Juliet Rose)

جولیٹ روس کو اگنے میں15 سال کا عرصہ لگتا ہے اور حقیقی معنوں میں یہ ایک منفرد پھول ہے- 2006 میں ہونے والے چیلسیا فلاور شو میں اس پھول کی قیمت تقریباً 16 ملین ڈالر یعنی 1 کروڑروپیہ تھی اور وہی اسے متعارف بھی کروایا گیا تھا اور آج بھی اس کی قیمت اتنی ہی ہے۔

گولڈ آف کینابالو آر کیڈ(Gold of Kinabalu Orchid)

اس طرح کے پھول آپ کو ملائیشیا کے کینابالو نیشنل پارک میں دکھائی دیں گے- اس پھول کا شمار دنیا کے انمول ترین پھولوں میں کیا جاتا ہے کیونکہ یہ انتہائی نایاب پھول ہے- یہ ہر 15 سال میں صرف ایک بار اگتا ہے اور وہ بھی اپریل اور مئی کے درمیان میں- اسی کمی کی وجہ سے بلیک مارکیٹ میں اس پھول کی صرف ایک ڈنڈی کی قیمت 5 ہزار ڈالر ہوتی ہے-

شہزین نونگکے آرکیڈ(Shenzhen Nongke Orchids)

معمولی دکھائی دینا والا یہ پھول انتہائی بیش قیمت ہے اور عموماً 2 لاکھ ڈالر میں فروخت کیا جاتا ہے- سائنسدانوں کے پھول پر کیے جانے والے 8 سال کے تجربات نے اسے مہنگا ترین پھول بنا دیا ہے اور یہ چین میں ہونے والی نیلامیوں کے دوران فروخت کیا گیا تھا-

سفرون کروکس (Saffron Crocus)

اس پھول کا شمار اوسط درجے کے پھولوں میں کیا جاتا ہے لیکن اس میں سے نکلنے والے مصالحے زعفران نے اسے قیمتی بنا دیا ہے- اس کے مہنگے ہونے کی وجہ بھی زعفران کا مہنگا ہونا ہی ہے- یہ پھول 1500 ڈالر فی پونڈ کے حساب سے فروخت کیا جاتا ہے-

ٹیولپ مانیا(Tulip mania)

یہ ایک نایاب اور خوبصورت پھول ہے جو کہ اب تاریخ کا حصہ بن چکا ہے-17 ویں صدی کے آخری حصے میں ٹیولپ مانیا کی قیمت حد سے زیادہ تھی ۔اس دور میں اس کی قیمت57 ہزار ڈالر تک پہنچ چکی تھی۔

ہائیڈرینگیا(Hydrangea)

یہ پھول مکمل طور پر گول ہوتا ہے اور اسی وجہ سے یہ انتہائی خوبصورت ہوتا ہے۔اس پھول کو رومانوی پھول ہونے کا درجہ بھی حاصل ہے لیکن اس کے اگنے کا عمل بھی انتہائی مشکل ہوتا ہے اور اس کی صرف ایک ڈنڈی تقریباً 7 ڈالر ہے-

لیلی آف دا ویلی (Lily of the Valley)

اس پھول کے گلدستے کی قیمت 143 ڈالر جو کہ بعض اوقات 350 ڈالر تک جاپہنچتی ہے۔اس پھول کی خاص بات یہ ہے کہ یہ سال میں ایک بار ہی اگتا ہے اور صرف چند ہفتوں تک ہی ٹھہر سکتا ہے- یہ اتنے نازک ہوتے ہیں کہ انہیں ہاتھوں میں اٹھا نے کے لیے کئی بار سوچنا پڑے۔

لسیانتھس(Lisianthus)

لسیانتھس نامی پھول کا ایک بنڈل 35 ڈالر میں فروخت کیا جاتا ہے۔اس پھول کے مہنگے ہونے کی وجہ اس پھول کا نازک ہونا ہے اور اسی وجہ سے ان کی نقل و حمل بھی آسان نہیں کیونکہ اس دوران بھی یہ اکثر مرجھا جاتے ہیں یا پھر ٹوٹ جاتے ہیں-

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے