خادم اعلیٰ

لاہور(ویب ڈیسک )کینٹ کچری کے جوڈیشل مجسٹریٹ نعمان ناصر نے اغوا ءکے مقدمہ میں ملوث حمزہ شہباز شریف کی مبینہ بیوی عائشہ احدکے کیس کی سماعت 16مئی تک ملتوی کرتے ہوئے فریقین کے وکلاءکو بحث کے لئے طلب کر لیاہے۔عائشہ احد کا کہنا ہے کہ پولیس نے سیاسی بنیادوں پر مقدمہ درج کیا،

وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف کو بھی کہا تھا میرا فیصلہ کریں۔جوڈیشل مجسٹریٹ نعمان ناصر کی عدالت میں کیس کی سماعت ہوئی، گزشتہ روز بھی درخواست گزار فلپائنی خاتون آج بھی عدالت میں پیش نہ ہوئیں، عائشہ احد کے وکیل چودھری بابر نے عدالت میں موقف اختیار کیا کہ پولیس نے عائشہ احد کے خلاف سیاسی بنیادوں پر بے بنیاد مقدمہ درج کیا ہے ،درخواست گزار فلپائنی خاتون جان بوجھ کر عدالت میں پیش نہیں ہو رہی ،درخواست گزار کے وکیل خود بھی نہیں جانتے ہیں کہ مدعی کون ہیں؟ عائشہ احد کے خلاف 26ستمبر 2011ءمیں مقدمہ درج کیا گیا تھا، پولیس کے ساتھ ساز باز کر کے اغوا کے مقدمہ میں ملوث کیا ہے،7سال سے مقدمہ زیر سماعت ہے اورعائشہ احد سات سال سے باقاعدگی سے پیش ہو رہی ہیں،مخالفین نے عائشہ احد کے گھر میں چوری کروا کر اغوا ءکے مقدمہ میں ملوث کیا ہے،درخواست گزار کے پیش نہ ہونے پر مقدمہ سے بری کیا جائے جس کے بعدفاضل جج نے کیس کی مزید سماعت آئندہ پیشی تک ملتوی کردی ۔عدالتی سماعت کے بعد عائشہ احد نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ میں نے شہباز شریف سے بھی کہا تھا کہ میں آپ کے گھر آرہی ہوں میرا فیصلہ کریں ،میری چیف جسٹس پاکستان سے اپیل ہے کہ وہ میرے کیس کا فیصلہ کریں ،پولیس کو میرے خلاف استعمال کیا گیا ہے ،ان کو سمجھ نہیں آرہی ہے کہ کیا کریں ۔اس کیس کی درخواست فلپائنی خاتون نہیں ہے ،اس کیس کے پیچھے حمزہ شہبازو،علی عمران ودیگرکا ہاتھ ہے، میں نے عورتوں کے حقوق کے لئے کام شروع کر دیا ہے،اگر ایک گناہ گار کو سزا مل جائے گی توباقی سب ٹھیک ہو جائیں گے۔(ش)

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے