ایران اور عراق کے سرحدی علاقے میں زلزلے سے 200 سے زیادہ افراد ہلاک

عراق اور ایران کے سرحدی علاقے میں سنیچر کی شب آنے والے زلزلے سے ہلاک ہونے والے افراد کی تعداد 221 ہو گئی ہے جبکہ پانچ ہزار سے زیادہ افراد زخمی ہیں۔
ایرانی حکام کے مطابق سات اعشاریہ تین شدت کے زلزلے کے نتیجے میں بیشتر ہلاکتیں عراقی سرحد سے متصل ایران کے مغربی صوبے کرمانشاہ میں ہوئی ہیں۔
کرمانشاہ صوبے میں کم سے کم 207 افراد ہلاک ہوئے ہیں جبکہ عراق میں اب تک زلزلے سے آٹھ افراد کی ہلاکت کی تصدیق کی گئی ہے۔
ایک ایرانی امدادی ادارے کا کہنا ہے کہ زلزلے سے متاثر ہونے والے 70 ہزار افراد کو فوری طور پر امداد اور پناہ گاہوں کی ضرورت ہے۔
عراق کے دارالحکومت بغداد میں زلزلے کے بعد لوگوں سڑکوں پر موجود ہیں۔
تین بچوں کی والدہ ماجدہ امیر نے خبر رساں ادارے رویئٹرز کو بتایا کہ ’میں اپنے بچوں کے ساتھ بیٹھ کر کھانا کھا رہی تھی کہ اچانک بلڈنگ ہوا میں جھولنے لگی۔ پہلے تو مجھے لگا کہ کوئی بم دھماکہ ہوا ہے۔‘
ایرانی خبر رساں ادارے اسنا نے طبی حکام کے حوالے سے بتایا ہے کہ 5341 افراد زخمی ہیں۔
عراق کے علاقے سلیمانیہ میں بھی زلزلے سے نقصان ہوا ہے
ایران کے سرکاری ہنگامی امدادی ادارے کے سربراہ پیر حسین قلیوند نے سرکاری ٹی وی پر بیان میں کہا ہے کہ ہلاک شدگان اور زخمیوں میں سے بیشتر کا تعلق سرحد سے 15 کلومیٹر کے فاصلے پر واقع قصبے سرپل ذہاب سے ہے
‎‎ اس قصبے میں بیشتر عمارتیں زمین بوس ہو گئی ہیں، بجلی کی ترسیل کا نظام متاثر ہوا ہے اور رابطہ منقطع ہونے سے امدادی سرگرمیوں میں مشکلات کا سامنا ہے۔
اس قصبے میں سرکاری ہسپتال کی عمارت کو بھی شدید نقصان پہنچا ہے۔
زلزلے سے لوگ خوف میں مبتلا ہو گئے اور آفٹر شاکس کے خدشات پر شہریوں کی بڑی تعداد گھروں سے باہر سڑکوں پر پناہ لیے ہوئے ہے۔
زلزلے کے جھٹکے اسرائیل اور ترکی میں بھی محسوس کیے گئے۔

زلزلے کے نتیجے میں بڑی تعداد میں عمارتوں کو نقصان پہنچا ہے
ایران کی سرکاری نیوز ایجنسی ارنا کا کہنا ہے کہ امدادی کارکنوں کو زلزلے سے متاثرہ ملک کے مغربی علاقوں میں روانہ کر دیا گیا ہے۔
ایران میں امدادی ادارے ریڈ کریسنٹ کے سربراہ مرتضیٰ سلیم کا کہنا ہے کہ زلزلے کے نتیجے میں آٹھ دیہات کو نقصان پہنچنے کی اطلاعات ملی ہیں جبکہ متعدد دیہات میں بجلی اور مواصلات کا نظام متاثر ہوا ہے۔
امریکی جیولوجیکل سروے کے مطابق زلزلے کا مرکز عراق کے جنوبی شہر حلبجہ سے 15 کلومیٹر دور تھا اور اس کی زمین میں گہرائی 33.9 کلومیٹر تھی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے