انعام کی رقم ڈیمز کی تعمیر کے لیے عطیہ کرنے کا اعلان کر دیا

لکی مروت (نیوزڈیسک) : پاکستان میں روز بروز پانی کی قلت میں اضافہ ہو رہا ہے اور اسی وجہ سے سپریم کورٹ نے دو ڈیمز بنانے کے احکامات جاری کیے تھے۔ پاکستان میں ڈیمز کی تعمیر کے لیے خود چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار نے بھی اپنی جیب سے 10 لاکھ روپے عطیہ کیے۔ تاہم اب بنوں کے ایک طالبعلم نے میٹرک کے امتحانات میں نمایاں

پوزیشن حاصل کرنے پر ملنے والی انعام کی رقم ڈیمز کی تعمیر کے لیے عطیہ کرنے کا اعلان کر دیا۔ لکی مروت کے طالبعلم محمد کو میٹرک کے امتحان میں نمایاں پوزیشن حاصل کرنے پرانعام دیا گیا تھا جسے اس نے ڈیمز کی تعمیر کے لیے عطیہ کرنے کا اعلان کر دیا ہے۔ سوشل میڈیا پر یہ خبر پھیلی تو صارفین نے نوجوان طالبعلم اور قوم کے معمار کے اس قومی جذبے کی خوب تعریف کی۔ محمد نامی اس طالبعلم نے انعام کی رقم عطیہ کرکے اپنے جیسے نوجوان اور بڑے بوڑھوں کے لیے ایک مثال قائم کر دی۔ قبل ازیں تیسری جماعت کے 9 سالہ طالبعلم علی شیر نے جیب خرچ بچا کر اور کھلونے فروخت کر کے جمع کیے جانے والے 10 ہزار روپے ڈیموں کے لیے عطیہ کردئیے ۔9 سالہ طالبعلم یہ رقم عطیہ کرنے کے نجی ٹی وی کے دفتر پہنچا اور وہاں یہ رقم بیورو چیف کے حوالے کردی جو اسے متعلقہ اکاؤنٹ میں جمع کروائیں گے۔اس موقع پر 9 سالہ علی شیر نے کہا کہ میں نے یہ رقم اپنے جیب خرچ سے بچا رکھی تھی جب کہ کچھ رقم پانے کھلونے فروخت کر کے کر اکٹھی کی۔ علی شیر نے کہا کہ مجھے رمضان میں احساس ہوا کہ پیاس کیا ہوتی ہے۔ میرا تعلق بلوچستان

سے ہے اور ہمارے ہاں بھی پانی کے مسائل ہیں اس لیے میں نے یہ رقم عطیہ کرنے کا سوچا، میں چاہتا ہوں کہ ملک میں ڈیمز بنیں اور کوئی پاکستانی پیاسا نہ رہے۔یاد رہےکہ 4 جولائی کو سپریم کورٹ نے کالا باغ ڈیم کی تعمیر سے متعلق کیس کا مختصر فیصلہ سناتے ہوئے بھاشا اور مہمند ڈیم ترجیحی بنیادوں پر تعمیرکرنے کے احکامات جاری کیے تھے جس کے بعد ملک کی کئی سیاسی جماعتوں اور سیاسی رہنماؤں نے سپریم کورٹ کے اس فیصلے کا خیر مقدم کیا تھا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے